جمعہ کو ملتوی ہونے والا اجلاس شام 4 بجے دوبارہ شروع ہوگا۔

اسمبلی سیکرٹریٹ سے جاری اجلاس کے ایجنڈے کے مطابق حکومت جنوبی پنجاب صوبہ بنانے کا آئینی ترمیمی بل پیش کرے گی۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے جمعہ کو بل پیش کیا۔

اجلاس کا آغاز جمعہ کو سپیکر اسد قیصر کی صدارت میں ہوا۔ تلاوت کلام پاک کے بعد اراکین نے پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی خیال زمان کے لیے فاتحہ خوانی کی جو رواں سال 14 فروری کو انتقال کر گئے تھے۔

فاتحہ خوانی کے بعد سپیکر نے اجلاس پیر کی شام 4 بجے تک ملتوی کر دیا۔

قیصر نے کہا کہ اجلاس کو پارلیمانی روایات کے مطابق ملتوی کیا گیا ہے جس میں رکن کی وفات کے بعد پہلے دن کا اجلاس مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کے لیے فاتحہ خوانی کے بعد ملتوی کیا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں اس روایت کے مطابق 24 سیشن ملتوی کیے گئے تھے۔

انہوں نے کہا کہ تحریک عدم اعتماد پر آئین کے مطابق کارروائی ہوگی۔

جمعرات کو جاری ہونے والے قومی اسمبلی کے اجلاس کے ایجنڈے میں تحریک عدم اعتماد شامل تھی۔

ایجنڈے میں عندیہ دیا گیا کہ عوامی نیشنل پارٹی کے امیر حیدر اعظم خان ہوتی سپیکر قومی اسمبلی کی اجازت سے تحریک عدم اعتماد پیش کریں گے۔

مشترکہ اپوزیشن نے 8 مارچ کو 152 ارکان کے دستخطوں سے تحریک عدم اعتماد قومی اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع کرائی تھی۔ وزیر اعظم عمران خان کی برطرفی کی تحریک منظور کرنے کے لیے کم از کم 172 ووٹ درکار ہیں۔

آئین کا آرٹیکل 95 کہتا ہے کہ ایک بار عدم اعتماد کی تحریک پیش کرنے کے بعد، ووٹ تین دن بعد اور سات دن پہلے ہونا چاہیے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: