بلقیس ایدھی کی نماز جنازہ کراچی میں ادا کر دی گئی۔

سماجی کارکن اور عبدالستار ایدھی کی بیوہ بلقیس بانو ایدھی کی نماز جنازہ کراچی کے ایم اے جناح روڈ پر واقع میمن مسجد میں ادا کی گئی۔

بلقیس ایدھی کی نماز جنازہ میں لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ سندھ پولیس کے چاق و چوبند دستے نے انہیں گارڈ آف آنر دیا۔

نماز جنازہ کے موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے جس میں مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں اور دیگر معروف شخصیات نے شرکت کی۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ، کراچی کے ایڈمنسٹریٹر مرتضیٰ وہاب اور پاکستان تحریک انصاف کی مقامی قیادت بھی اس موقع پر موجود تھی۔

بلقیس ایدھی کی عمر 74 برس تھی اور انہوں نے اپنی زندگی کی چھ دہائیوں سے زائد عرصہ انسانیت کی خدمت میں گزارا۔ وہ ایک پیشہ ور نرس تھیں جو بلقیس ایدھی فاؤنڈیشن کی سربراہ تھیں۔ انہوں نے اپریل 1966 میں عبدالستار ایدھی سے شادی کی۔

بلقیس ایدھی کے فلاحی ادارے نے ملک بھر کے ایدھی ہومز اور مراکز میں جھولے رکھ کر ہزاروں ناپسندیدہ بچوں کو بچایا۔

پاکستان کی والدہ بلقیس ایدھی کو کئی ملکی اور غیر ملکی اعزازات سے نوازا گیا جن میں ہلال امتیاز، لینن پیس پرائز، مدر ٹریسا میموریل انٹرنیشنل ایوارڈ برائے سماجی انصاف (2015) اور ریمن میگسیسے ایوارڈ برائے عوامی خدمات شامل ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: