پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے منگل کو اعلان کیا کہ وہ کل وفاقی وزیر کے عہدے کا حلف اٹھائیں گے اور امکان ہے کہ انہیں وزیر خارجہ بنایا جائے گا۔

پی پی پی کی سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی (سی ای سی) کے اجلاس کے بعد انہوں نے پریس کانفرنس میں اس فیصلے کا اعلان کیا۔

بلاول نے کہا کہ سابق وزیر اعظم عمران خان کے “غیر ملکی سازش” کے بیانیے نے بین الاقوامی فورمز پر پاکستان کے امیج کو نقصان پہنچایا، انہوں نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی کے چیئرمین کی “سازشیں” جاری رہیں گی کیونکہ وہ عدلیہ سے اپنے اہداف الیکشن کمیشن آف پاکستان کو منتقل کرتے رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ خان نے آئین کی خلاف ورزی کی اور اسے “کاغذ کا ٹکڑا” سمجھا، جب کہ سابق ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری اور صدر عارف علوی بھی ان کے ساتھ “سازش” میں ملوث تھے۔

پیپلز پارٹی کے رہنما نے مطالبہ کیا کہ اس وقت کے وزیر اعظم کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ سے ایک رات پہلے پیش آنے والے واقعات کی تحقیقات کی جائیں۔

بلاول نے کہا کہ عمران خان کی سیاست جھوٹ اور پراپیگنڈے پر مبنی ہے، سابق وزیر اعظم مہم چلا رہے تھے ‘مجھے کیوں نہیں بچایا’۔

مسلم لیگ (ن) کے قائد سے ملاقات کے حوالے سے بلاول نے کہا کہ نواز شریف نے انہیں افطار کی دعوت دی تھی، جہاں انہوں نے میثاق جمہوریت پر تبادلہ خیال کیا۔

پی پی پی رہنما نے کہا کہ عمران خان پارلیمنٹ اور جمہوریت پر یقین نہیں رکھتے اور گزشتہ چار سالوں سے وہ پاکستان کے ہر ادارے کو ٹائیگر فورس بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

بلاول نے کہا کہ گزشتہ ساڑھے تین سال سے ہم پر ایک ایسا نظام مسلط ہے جس نے ہر صوبے کو اس کے حقوق سے محروم کر دیا ہے کیونکہ اس دور میں این ایف سی ایوارڈ اٹھارہ ترمیم پر عمل کیے بغیر نہیں دیا گیا جس سے ہر صوبے کو نقصان پہنچا۔

خبر کا ذریعہ جی این این نیوز

%d bloggers like this: